دادابھائ انسٹیٹیوٹ آف ہائر ایجوکیشن میں “نوجوانوں میں منشیات کا استعمال اور روک تھام” کے عنوان سے سیمینار

کراچی(بولونیوز) کراچی یوتھ فیڈریشن کے زیر انتظام 13 جون 2019 کو دادابھائ انسٹیٹیوٹ آف ہائر ایجوکیشن میں “نوجوانوں میں منشیات کا استعمال اور روک تھام” کے عنوان سے سیمینار کا انعقاد کیا گیا. جس میں جوائنٹ ڈائریکٹر اینٹی نارکوٹکس فورس کرنل آفتاب احمد نے بحیثیت مہمان خصوصی شرکت کی اور طلباء اور طالبات سے خطاب کرتے ہوۓ کہا کہ نوجوان نسل میں منشیات کا رحجان بڑھتا جا رہا ہے اور منشیات کے اثرات سے نوجوان نسل بربادی کی طرف متوجہ ہوتی جارہی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ یوتھ ایمبیسیڈر پروگرام تمام جامعات تک پہچائیں گے اور اینٹی نارکوٹکس فورس نوجوانوں کو انسداد منشیات کی روک تھام میں بھرپور ساتھ دیا جائیگا تاکہ نوجوان نسل میں منشیات کے استعمال کی وجہ سے بربادی سے بچا جاۓ. اور اس کے ساتھ ساتھ ڈین فیکلٹی آف سائنس ڈاکٹر شاہانہ عروج کاظمی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں 80،000 لوگوں کی تعداد منشیات کا استعمال کرتی ہے جن کی عمر 15 سے 64 عمر تک ہے اور ان میں %78 نوجوان مرد ہیں اور %22 نوجوان خواتین شامل ہیں اسی کے ساتھ ساتھ کارون آف لائف ٹرسٹ کے ایگزیکیٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر قاضی توصیف کا کہنا ہے کہ نوجوانوں میں منشیات کے استعمال کی سب سے بڑی وجہ ذہنی دباؤ ہے جس سے نوجوان نسل منشیات کی طرف راغب ہوتی ہے.اور اسکے علاوہ دیگر مہمانوں میں شامل ڈاکٹر محمد مختار , جناب عابد ذوالفقار، جناب ریٹائرڈ کیپٹن ظہیر احمد، جناب ڈاکٹر علی عمران , کنوینیر کراچ یوتھ فیڈریشن محمد ظفیر اور ڈاکٹر سیدہ صدف اکبر نے بھی سیمینار سے خطاب کیا.چیئرمین کے وائی ایف اور چیف آرگنائز اے این ایف ایمبیسڈرز پروگرام محمد عمر خان نے اس عزم کا اظهار کیا که یه پروگرام ملک بھر کی جامعات تک پهنچائیں گے اور نوجوانوں کو مثبت سرگرمیوں کطرف مائل کریں گے-سیمینار کی سربراہی ڈپٹی انفارمیشن سیکرٹری اریبہ آصف نے کی. اور فائینینس سیکٹری بائرہ ملک نے آخر میں سب مہمانوں کا شکریہ ادا کیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں