SBCAصدر ٹائون ون کے افسران نے توہین عدالت شروع کردی

کراچی(بولونیوز)صدرٹائون ون میں پلاٹ نمبر54شیٹ نمبر2صدر ٹائون ون میں محکمہ آثار قدیمہ کی بلڈنگ کو بغیر کسی اجازت کےگراکرچھ منزلہ عمارت کی تعمیرزوروشورسےجاری ہے۔ہیرٹیج کی لسٹ میں موجود کوئٹہ انٹرپرائزز نامی بلڈنگ پلاٹ نمبرMR-2/8میرٹ روڈ فخر ماتری روڈ صدر ٹائون ون میں ہیرٹیج کی گرائونڈ +ون فلور بلڈنگ پر بھی تعمیرات کا کام زور و شور سے جاری ہے۔پلاٹ نمبرMR-6/1دریالال اسٹریٹ ورجی اسٹریٹ صدر ٹائون ون میں جو کہ ہیرٹیج کی لسٹ میں گرائونڈ پلس ٹو فلور تھی اسے گرا کر پلازہ بنانے کی تیاری کی جارہی ہے۔غیر قانونی تعمیرات پر جہاں ایک طرف شہر کے آثار قدیمہ کا خاتمہ کیا جارہاہے وہیں سپریم کورٹ کے غیر قانونی عمارتوں کے خلاف احکامات کی دھجیاں اڑا کر سر عام توہین عدالت کی جارہی ہے۔کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی صدر ٹائون ون کے افسران نے توہین عدالت شروع کردی،محکمہ آثارقدیمہ ثقافت وسیاحت کی عمارات پرہائیکورٹ کی پابندی کےباوجود سرعام تعمیرات جاری، تفصیلات کےمطابق صدرٹائون ون میں پلاٹ نمبر54شیٹ نمبر2صدر ٹائون ون میں محکمہ آثار قدیمہ کی بلڈنگ کو بغیر کسی اجازت کےگراکرچھ منزلہ عمارت کی تعمیرزوروشورسےجاری ہے،اس کی تعمیرکی سرپرستی میں ڈی جی ایس بی سی اے،صوبائی وزیر سعید غنی اور نیب کراچی ریجن کے ڈائریکٹر کا نام لیا جارہاہے،ایس بی سی اے میں یہ تاثر دیا جارہاہے کہ مذکورہ بلڈنگ کو نیب کراچی ریجن کے نام سے منسوب کیا جارہاہے جبکہ اس بلڈنگ کے سابقہ رہائشی اور علاقہ مکین متعدد بار درخواستیں دے چکے ہیں مگر نیب کراچی ریجن کے ڈائریکٹر کا نام استعمال ہونے کی وجہ سے اس بلڈنگ کیخلاف ڈی جی ایس بی سی اے سمیت تمام حکام اس کیخلاف کاروائی سے قاصرہیں،ہیرٹیج کی لسٹ میں موجود کوئٹہ انٹرپرائزز نامی بلڈنگ پلاٹ نمبرMR-2/8میرٹ روڈ فخر ماتری روڈ صدر ٹائون ون میں ہیرٹیج کی گرائونڈ +ون فلور بلڈنگ پر بھی تعمیرات کا کام زور و شور سے جاری ہے جس پر صدر ٹائون ون کے حکام چپ سادھ لئے ہوئے ہیں،پلاٹ نمبرMR-6/1دریالال اسٹریٹ ورجی اسٹریٹ صدر ٹائون ون میں جو کہ ہیرٹیج کی لسٹ میں گرائونڈ پلس ٹو فلور تھی اسے گرا کر پلازہ بنانے کی تیاری کی جارہی ہے۔مذکورہ غیر قانونی تعمیرات پر جہاں ایک طرف شہر کے آثار قدیمہ کا خاتمہ کیا جارہاہے وہیں سپریم کورٹ کے غیر قانونی عمارتوں کے خلاف احکامات کی دھجیاں اڑا کر سر عام توہین عدالت کی جارہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں