نازیہ حسن بہت پیارکرنیوالی بیوی تھی،اشتیاق بیگ

لاہور(بولونیوز)پاکستان میں گائیکی کو نئی جہت دینے والی نازیہ حسن کو دارفانی چھوڑے ہوئے 19 برس بیت چکے ہیں اور اب ان کے شوہر مرزا اشتیاق بیگ نے پہلی بار زبان کھولتے ہوئے بہت سی غلط فہمیوں کو دور کر دیا ہے۔اشتیاق بیگ کا کہنا ہے کہ انہوں نے نازیہ حسن کو طلاق نہیں دی تھی وہ مرتے دم تک ان کے نکاح میں تھیں، انہوں نے کہا نازیہ حسن میرے لئے میری پوری دنیا تھی، وہ ایک بہت پیار کرنے والی بیوی تھی جسے اپنی تمام ذمہ داریوں کا علم تھا۔جرمنی کے نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے مرزا اشتیاق بیگ نے کہا نازیہ حسن اور ان کے حوالے سے بہت سی غلط فہمیاں پھیلائی گئی تھیں۔ لوگ کہتے ہیں کہ ہمارا تعلق کامیاب نہیں ہو سکا تھا، یہ بھی کہا گیا کہ نازیہ کی موت سے دس روز پہلے طلاق ہو گئی تھی۔ میں نے آج تک نازیہ کو طلاق دینے کی حقیقت سے پردہ نہیں اٹھایا کیونکہ نازیہ کا انتقال ہو چکا تھا اور میں دنیا کو وضاحتیں نہیں دینا چاہتا تھا۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق انھوں نے کہا کہ طلاق کی بات میں کوئی صداقت نہیں، وہ مرتے دم تک میرے نکاح میں تھی، جس کا ثبوت میرے پاس اب بھی موجود ہے۔ انہوں نے کہا میری اور نازیہ حسن کی محبت کی شادی تھی، نازیہ میری بہن آفرین بیگ کی دوست تھیں،ہم ایک دوسرے کودل وجان سےپسند کرتے تھے۔ اتنا ضرور ہے کہ نازیہ کے گھر والوں اور میرے درمیان اختلافات کی بہت سی وجوہات تھیں، اس کی والدہ کو غلط فہمی تھی کہ میں نازیہ کے گانا گانے کے مخالف ہوں۔اشتیاق بیگ کا کہنا ہے کہ نازیہ کی خواہش تھی کہ وہ ماں بنے، اس کی یہ خواہش پوری ہوئی اور ہمارا بیٹا پیدا ہوا جس کا نام ہم نے اریض رکھا، میں نے اس کا مرتے دم تک ساتھ دیا۔ نازیہ ایک بہت ذہین، حسین اور خوبصورت شخصیت کی مالک تھی، وہ جو محسوس کرتی تھی اس کا برملا اظہار کر دیتی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں