پیٹرتیبچی اپنی تنخواہ کا 80 فیصد حصہ غریب بچوں کی تعلیم پرخرچ کرتے ہیں

افریقہ(بولونیوز)افریقی استاد کے لئے دنیا کے بہترین ٹیچر کا ایوارڈ، پیٹر تیبچی اپنی تنخواہ کا 80 فیصد حصہ بے گھر اور غریب بچوں کی تعلیم و تربیت پر خرچ کرتے ہیں۔کینیا کے ساحلی صوبے رفٹ ویلی کے علاقے پوانی کے پسماندہ گاؤں میں فزکس اورریاضی پڑھانے والے36 سالہ پیٹرتبیچی کودبئی میں ہونے والے سالانہ “گلوبل ٹیچر پرائز” میں بہترین استاد منتخب کیا گیا،یہ ایوارڈ ہرسال دبئی کی “رکی فاؤنڈیشن” کی جانب سے دنیا بھرکےان استادوں کےلیے منعقد کیا جاتا ہے جو مشکلات کےباوجوداحسن طریقےسے تعلیم کو آگے بڑھاتے ہیں۔رواں برس اس مقابلے میں دنیا بھر کے 180 ممالک کے اساتذہ امیدوار تھے،فائنل کےدوسرے راؤنڈ میں صرف 10اساتذہ کومنتخب کیا گیا تھا جس میں فلسطین کی خاتون استاد سمیت یورپ و امریکی ممالک کے اساتذہ بھی شامل تھے۔پیٹر تیبچی کو دبئی کے شہزادے شیخ حمدان بن محمد بن راشد المختوم نے ایوارڈ دیا۔ایوارڈ جیتنے کے بعد پیٹر تیبچی نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افریقی استادوں کے لیے ہر گزرتا دن نئے چیلنجز لاتا ہے اور وہاں کے استاد ہر روز نئے مسائل سے جنگ لڑ کر تعلیم کو جاری رکھنے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں