11 عمارتوں میں غیر قانونی تعمیرات مسمار کرنے کا فیصلہ

کراچی (بولونیوز) سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے نارتھ ناظم آباد، فیڈرل بی ایریا اور سائٹ کے علاقے میں گیارہ مختلف عمارتوں میں ہونے والی غیر قانونی تعمیرات کو فوری مسمار کرنے کافیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن نے تمام متعلقہ ذمہ داران سے 48 گھنٹوں میں رپورٹ طلب کی ہے۔ ذرائع کے مطابق ان عمارتوں میں کیتھولک سوسائٹی کی ایک عمارت، سائٹ لمیٹڈ کی ایک عمارت ،فیڈرل بی ایریا کی پانچ عمارتیں اور ناظم آباد و نارتھ ناظم آباد کی چار عمارتیں شامل ہیں۔ ڈ ائریکٹر ایڈمنسٹریشن کے آفس سے جاری ہونے والے لیٹر کے مطابق تمام متعلقہ ڈائریکٹرز کو 48 گھنٹوں میں کارروائی کی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ باخبرذرائع کے مطابق کیتھولک سوسائٹی میں واقع ایک شادی ہال کو مسمار کردیاگیا ہے جبکہ بقیہ کو بھی آنے والے دنوں میں مسمار کردیاجائے گا ۔ دریں اثنا ایس بی سی اے کی تازہ کارروائیوں کے باعث شہرمیں تعمیر ہونے والی کم وبیش 140غیر قانونی عمارتوں کے مکین بھی خوف کا شکارہیں۔ اس حوالے سے ایس بی سی اے نے عوام کو انتباہ جاری کیا تھا کہ ان عمارتوں میں خریدوفروخت سے اجتناب کیا جائے۔ بعض ذرائع کے مطابق 140 غیر قانونی عمارتوں کی فہرست کم و بیش ایک برس پرانی ہے لیکن سپریم کورٹ کے تازہ احکامات کی روشنی میں ان کے خلاف بھی کارروائی متوقع ہے۔ ذرائع کے مطابق اس وقت بھی شہرکے مختلف علاقوں میں بغیر اجازت درجنوں عمارتوں کی تعمیر پر کام جاری ہے جسے روکنے کی کوشش نہیں کی جا رہی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں