ڈیم نہیں بناتوہماری نسلیں پانی کی بوندبوندکوترسیں گی

اسلام آباد(بولونیوز)چیف جسٹس ثاقب نثار نے دیامربھاشامہمندڈیم تعمیرعملدرآمدکیس میں ریمارکس دیئے آج اگر ڈیم فنڈ کی مہم بنی ہے تو اس میں میڈیا کا بہت بڑا کردار ہے،، ڈیم نہیں بناتو ہماری کی نسلیں پانی کی بوندبوندکوترسیں گی، چیئرمین ایف بی آربتائیں ڈیم فنڈکی سرمایہ کاری کس جگہ کی جا سکتی ہے، مخدوم اورڈاکٹرپرویزحسن پروپوزل کی تیاری میں مددفراہم کریں گے۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 5 رکنی خصوصی بینچ نے دیامربھاشامہمند ڈیم تعمیر عملدرآمد کیس کی سماعت کی ، عدالت نےمیڈیاپرڈیم ٹھیکے سے متعلق تنقید پر پیمرا سے جواب طلب کیا تھا۔اٹارنی جنرل نے میڈیاکی تعریف کرتے ہوئے بتایا پیمرا نے 76 ٹاک شوز کا ریکارڈ پیش کیا ہے، ڈیم فنڈکی تشہیر کے لیے ٹی وی چینل اشتہارچلا رہے ہیں،میڈیا پر3 ارب روپے کے مفت اشتہارات چلائے گئے، ہر چینل نے ڈیم فنڈ کے لیے کام کیا ہے۔جسٹس عمرعطابندیال نے ریمارکس میں کہا ڈیم ٹھیکے پر تنقیداور واپڈا کا مؤقف نہ لیا جائے تو یہ ٹھیک نہیں، جس پر اٹارنی جنرل کا کہنا تھا ایک نجی ٹی وی چینل کےاس معاملےپرایک پوراپروگرام کیا۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آج اگر ڈیم فنڈ کی مہم بنی ہے تو اس میں میڈیا کا بہت بڑا کردار ہے، میڈیا نے حب الوطنی کے جذبے کے تحت کام کیا ہے۔جسٹس عمرعطابندیال نے غریدہ فاروقی سے استفسار کیا پیپراکامطلب کیاہے، آگاہ کریں پیپرا کے کون سے قانون کی خلاف ورزی ہوئی، جس پر غریدہ فاروقی پیپرا کا مطلب نہ بتاسکیں ، جسٹس اعجاز الاحسن نے بھی استفسار کیا آپ کو ریسرچ کون کرکے دیتاہے، تو غریدہ فاروقی نے جواب میں کہاسرمیری پوری ریسرچ کی ٹیم ہے۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے مضرصحت مٹھائیوں کےلیےکوئی ٹیم نہیں بنائی، مٹھائیوں میں جراثیم پکڑےجائیں تورونادھوناشروع کردیتےہیں،جسٹس ثاقب نثارنے ریدہ فاروقی سے استفسارکیا آپ کیاچاہتی ہیں یہ ڈیم نہ بنے۔چیئرمین پیمرانے کہا نجی ٹی وی کوشوکازدے کر وضاحت مانگیں گے،جس پرچیف جسٹس کا کہنا تھا نجی چینل کا لائسنس منسوخ کریں بعدمیں ریسرچ ٹیم دیکھیں گے۔سماعت میں اینکرغریدہ فاروقی نے کہا آپ اس ملک کے مسیحاہیں، جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا ہمیں مسیحاسمجھا جاتاہے تو ہمارا ساتھ دیا جائے، ڈیم کی کسی جزیات پر بات کرنا ڈیم کو روکنے کے مترادف ہے ، ڈیم نہیں بنا تو ہماری کی نسلیں پانی کی بوند بوند کوترسیں گی۔چیف جسٹس نےاینکرسےاستفسارکیا بتائیں میرٹ کا قتل کیسے ہوا یہالفاظ کیوں استعمال کئے،جسٹس اعجازالاحسن نے کہا ڈیم بڈنگ کی وضاحت ہو چکی ہے تو ایشو کیوں بنایا، عدالت نے نجی چینل کو پروگرام میں وضاحت اورآئندہ احتیاط پرمعاملہ نمٹادیا۔چیئرمین واپڈا نے عدالت کو بتایا وزات توانائی نے164ارب روپےواپڈاکودینےہیں، جس پر چیف جسٹس نے چیئرمین واپڈاسےمکالمے میں کہا آپ ہرماہ پیشرفت رپورٹس دیں، گورنراسٹیٹ بینک بیرون ملک سےفارن ایکسچینج کےریٹس دیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں