ایل پی جی قیمتوں میں‌ بے تحاشا اضافہ، لاکھوں رکشہ ڈرائیوروں کا چولہا ٹھنڈا

لاہور ( پریس ریلیز) چیئرمین ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان ، چیئر مین و فاؤنڈر ایل پی جی انڈسٹریز ایسوسی ایشن آف پاکستان (ایل پی جی چیمبر آف پاکستان) عرفان کھوکھر نے کہا کہ ایل پی جی کی قیمت میں مزید5 روپے فی کلو،60روپے گھریلو سلنڈر ، 120 روپے کمرشل سلنڈر کا بلا جواز اضافہ ،لوکل ایل پی جی پروڈیوسرگیس مافیا نے قیمت میں چوتھا اضافہ کر کے لاکھوں غریب رکشہ ڈرائیوروں کے چولہے ٹھنڈے کر دئے۔ امپورٹ نہ ہونے کے برابر، 95%فیصد لوکل ایل پی جی کو بین الاقوامی قیمت سے بھی ذیادہ قیمت ۔ ملک بھر میں ایل پی جی قیمتوں میں اوگرہ نوٹیفیکیشن کے بغیر ہی4 دن میں تیسرا اضافہ، مزید قیمتیں بڑھنے کا اندیشہ۔ایل پی جی لوکل پروڈیوسر مافیا نے بلیک مارکیٹنگ کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا، قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح عبور کر چکی ہے۔حکومت کے ایل پی جی پالیسی 2016 میں895 روپے گھریلو سلنڈر اور 75روپے فی کلو ایل پی جی کی جگہ200روپے فی کلو سے تجاوز کر گئی۔ایل پی جی پالیسی 2016کے مطابق ایل پی جی پروڈیوسر کی قیمت 30000فی میٹرک ٹن مقرر کرنے کا مطالبہ۔ 14جون 2018 سے JJVL ایل پی جی پیداواری پلانٹ کی بندش سے ایل پی جی انڈسٹری میں بہت بڑا خلاء پیدا ہو گیا جس سے تقریباً13000 میٹرک ٹن فی ماہ کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے ایل پی جی انڈسٹری کو 26000 میٹرک ٹن کی کمی کا سامنا اور SSGCاور حکومت کو 2ماہ میں ٹوٹل 2ارب 43 کڑوڑ اور ٹیکس کی مد میں 472 ملین کا نقصان ہوا ہے۔ کسی بھی قیمت پر پلانٹ چالو کر کے سپلائی بحال کی جائے،ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کا مطالبہ۔ قیمتیں بڑھنے سے غریب عوام پر بوجھ بڑھ گیا۔ لوکل ایل پی جی پیداوار کو تمام ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں میں میرٹ کی بنیاد پر تقسیم کیا جائے اور شرط عائد کی جائے کہ اس میں 50% امپورٹ کو شامل کر کے صارفین کیلئے ایک قیمت مقرر کی جائے تو قیمت میں 30فیصد کمی آسکتی ہے۔ایل پی جی پروڈیوسر مافیا کو لگام ڈالنا ضروری ہو گیا۔30 اگست 2018 کو لاہور میں بہت بڑا مظاہرہ کیا جائے گا۔ اگر ایل پی جی کی قیمتوں کو قابو نہ کیا گیا تو 5 ستمبر 2018 کو خیبر سے کراچی تک شٹر ڈاؤن اور پہیہ جام ہڑتال ہوگی۔ہم غریب عوام کو ریلیف دینے کیلئے حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کا وزیر اعظم پاکستان اور وزیر پٹرولیم سے اس سنگین معاملے پر اس خود نوٹس لینے کا مطالبہ۔
کراچی 150روپے فی کلو،لاہور، گوجرانوالہ، گجرات، حیدرآباد، سکھر، قصور 165روپے فی کلو،جہلم، میاں چنوں، ساہیوال، فیصل آباد، بہاولپور، ملتان، راجن پور، رحیم یار خان،پشاور، 170روپے فی کلو،راولپنڈی، اسلام آباد، ٹندو اللہ یار، سیالکوٹ،ڈیرہ اسماعیل خان،بھکر، سوات180روپے فی کلو، مری، نتھیا گلی، بالا کوٹ 190 روپے فی کلو،آزادکشمیر، گلگت بلتستان، پہاڑی علاقوں 210روپے فی کلو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں