ایف بی آر اور تاجروں کے مذاکرات ناکام، ملک گیر ہڑتال کا اعلان

 اسلام آباد (بولونیوز) اسلام آباد میں ایف بی آر حکام اور تاجروں کے مذاکرات ناکام ہوگئے جس کے بعد تاجروں نے ملک گیر ہڑتال کا اعلان کردیا ہے۔۔ اس سے پہے وفاقی دارالحکومت کے ریڈزون میں داخلے کی کوشش پرپولیس نے تاجروں پر لاٹھی چارج کیا جس کے جواب میں مظاہرین نے اہلکاروں پر پتھراؤ شروع کردیا۔۔ تاجر نادرا چوک پر دھرنا دے کر بیٹھ  گئے جس کے بعد ایف بی آر کی ٹیم اور تاجر عہدیداروں کے درمیان مذاکرات ہوئے جو بے نتیجہ ثابت ہوئے، تاجر نمائندہ وفد دھرنے میں لوٹ آیا اور کہا کہ قیادت نے فیصلہ کرلیا ہے کہ شناختی کارڈ کی شرط کو نہیں مانتےاورحکومت جو مرضی کر لے ہم شناختی کارڈ نہیں دیں گے، 28 اور 29 اکتوبر پورے ملک میں شٹرڈاوٴن کیا جائے گا جب کہ 15 اکتوبر سے روزانہ ایک گھنٹے کی ہڑتال کی جائے گی۔ تاجروں کی  بڑی تعداد  ریلی کی صورت میں آبپارہ چوک سے سیرینا چوک پہنچی تو پولیس نے انہیں آگے بڑھنے سے روک دیا، مظاہرین نے خاردار تاریں اور تمام رکاوٹیں ہٹا دیں اور حکومت کی معاشی پالیسیوں کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش کے دوران پولیس اور مظاہرین آمنے سامنے آگئے جب کہ پولیس نے مظاہرین پر لاٹھی چارج شروع کردیا جس کے جواب میں مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ شروع کردیا، صورتحال مزید بگڑنی پر پولیس کی اضافی نفری کو بھی طلب کرلیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں