عدالتی حکم کے باوجود اسحاق ڈار پیش نہیں ہوئے،سپریم کورٹ برہم

اسلام آباد(بولونیوز) سپریم کورٹ نے عدالتی حکم کے باوجود اسحاق ڈارکے پیش نہ ہونے پربرہمی کا اظہارکیا اوراستفسارکیا سابق و ز یر اعظم لندن میں ملزم سے ملتے رہتے ہیں، واپسی کیلئے کتنا وقت چاہیے؟ عدالت نے تمام اداروں کو وزارت داخلہ کی مدد کرنے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں عطاء الحق قاسمی تقرری کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس ثاقب نثارنے استفسارکیا کیا اسحاق ڈارتشریف لائے ہیں،سیکرٹری داخلہ بتائیں اسحاق ڈارکوکیسے واپس لانا ہے، مقدمہ میں بیشترلوگوں کے دلائل مکمل ہو چکے ہیں۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ نے پوچھا کہ کیا عطاء الحق قاسمی کی بھاری تنخواہ کے لیے کسی نے ہدایت کی تھی، کیا عطا الحق قاسمی کو 15 لاکھ دینے کا جواز تھا، ہو سکتا ہے یہ معاملہ نیب کو بھجوا دیں، نیب کے حکام یہاں کمرہ عدالت میں موجود ہیں، تقرری قانونی تھی یا غیر قانونی فیصلہ کریں گے۔ سابق سیکریٹری خزانہ نے عدالت کو بتایا کہ عطاء الحق قاسمی تقرری کی سمری میں نے نہیں بھیجی، تنخواہ کی سمری وزارت اطلاعات نے بھیجی، ایم ڈی پی ٹی وی 14 لاکھ تنخواہ لے رہے تھے، تنخواہ کی سمری کا جائزہ متعلقہ ونگ نے لیا۔