فیفا فٹبال ورلڈکپ،آج سے افتتاحی معرکہ روس بمقابلہ سعودی عرب سے ہوگا

روس(بولونیوز)فیفا ورلڈ کپ دو ہزار اٹھارہ کا میلہ آج سے روس میں سجے گا جہاں افتتاحی معرکے میں میزبان ملک روس کا مقابلہ سعودی عرب سے ہوگا،میچ سے آدھے گھنٹے قبل زبردست افتتاحی تقریب کا اہتمام کیا گیا ہے جہاں پاپ اسٹاررابی ولیمز کے ہمراہ روسی اوپیرا سنگر ایڈا گیریفولینا بھی اپنے فن کا مظاہرہ کریں گی،32 ٹیموں پر مشتمل ایونٹ کے میچز گیارہ شہروں کے بارہ وینیوز پر ہوں گے ،پاکستانی وقت کے مطابق افتتاحی میچ کا 8 بجے شب آغاز ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق فیفا ورلڈ کپ کا آج سے روس کے شہر ماسکو میں آغاز ہو رہا جہاں لوزنیکی اسٹیڈیم میں میزبان ملک روس اور سعودی عرب کی ٹیمیں مقابل آئیں گی،یہ وہی اسٹیڈیم ہے جہاں مقابلوں کا فیصلہ کن معرکہ بھی شیڈول ہے ۔ پاکستانی وقت کے مطابق آٹھ بجے شروع ہونے والے اوپننگ میچ سے آدھے گھنٹے قبل زبردست افتتاحی تقریب کا اہتمام کیا جائے گا جہاں برطانوی پاپ اسٹار رابی ولیمز اور روسی اوپیرا سنگر ایڈا گیریفولینا کے ہمراہ پانچ سو کے لگ بھگ رقاص،جمناسٹ اور کرتب دکھانے والے بھی اپنے فن کا بھرپور مظاہرہ کریں گے جبکہ اسی دوران ماسکو کے معروف ریڈ اسکوائر میں ایک میوزیکل کنسرٹ بھی ہوگا۔ فیفا حکام کے مطابق ماضی کے برعکس اس مرتبہ انہوں نے افتتاحی تقریب کا انداز بدل دیا ہے جس میں موسیقی کو اولین ترجیح دی جا رہی ہے اور روایتی انداز سے اوپیرا سنگرز کو اہمیت کے لائق سمجھا گیا ہے کیونکہ کلاسیکل موسیقی ساری دنیا میں سمجھی اور پسند کی جاتی ہے ۔ علاقائی مقابلوں کے بعد فیفا ورلڈ کپ میں 32 ٹیمیں شرکت کر رہی ہیں جن کو آٹھ مختلف گروپس میں تقسیم کیا گیا ہے ۔ ابتدائی مقابلوں کے بعد ہر گروپ سے دو ٹیمیں ناک آؤٹ مرحلے کیلئے کوالیفائی کریں گی اور 16 ٹیموں پر مشتمل اس راؤنڈ سے ہارنے والی ٹیمیں ایونٹ سے رخصت ہوتی جائیں گی۔ گیارہ شہروں کے بارہ وینیوز پر ہونے والے مقابلوں کیلئے کم و بیش ہر گراؤنڈ کو کم از کم چار میچز دیئے گئے ہیں جن میں ماسکو کا لوزنیکی اور سینٹ پیٹرزبرگ اسٹیڈیم نمایاں حیثیت کا حامل ہوگا جہاں سب سے زیادہ میچز کھیلے جائیں گے ۔ واضح رہے کہ مقابلوں کے آغاز سے قبل روس میں میزبان شہروں کو دلہن کی طرح سجا دیا گیا ہے تاہم سیکیورٹی انتظامات بھی کافی سخت ہیں اور میگا ایونٹ کے دوران 41 مقامات سے پروازوں کی آمد بھی معطل کردی گئی ہے ۔ میزبان شہروں کے گرد 100 کلومیٹرز کی حدود میں ڈرون کیمروں کا استعمال ممنوع ہوگا جبکہ اسٹیڈیمز کے اطراف میں جیمرز بھی نصب کئے گئے ہیں۔