پھرلندن اُڑان،نوازشریف اورمریم نوازنے برطانیہ کی پروازپکڑ لی

لاہور(بولونیوز) سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز لندن روانہ ہوگئے،جہاں وہ بیگم کلثوم نواز کے ساتھ عید منائیں گے،وہ وہاں پرڈاکٹروں کے ساتھ کلثوم نواز کی طبیعت کے حوالے سے بھی مشاورت کریں گے اور ایک ہفتے کے بعد نواز شریف اور مریم نواز وطن واپس لوٹیں گے۔تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم غیرملکی ایئرلائن کی پرواز سے براستہ دوحا لندن جائیں گے جہاں وہ اہلیہ کلثوم نوازکی عیادت کریں گے۔ جاتی امراء سے ایئرپورٹ روانگی کے موقع پرکارکنان کی بڑی تعداد وہاں موجود تھی اور کارکنان نے سابق وزیراعظم کی گاڑی پر پھول بھی نچھاور کیے۔ نواز شریف عید کے بعد وطن واپس آئیں گے جبکہ احتساب عدالت نے انہیں آج حاضری سے استثنیٰ دے رکھا ہے۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مریم نواز نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ لندن روانہ ہو رہی ہوں، انشااللہ اگلے ہفتے واپسی ہے، امی سے ملاقات اور انہیں گلے لگانے کیلئے بے تاب ہوں، آپ سب سے امی کی صحت کیلئے خصوصی دعا کی اپیل ہے۔دوسری جانب مریم نواز نے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے موقع پر کمرہ عدالت میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کروڑوں ووٹ لینے والا اہل نہیں جبکہ 2 دفعہ آئین توڑنے والے ڈکٹیٹر کو کہا جا رہا کہ کوئی بات نہیں آپ آئیں اور الیکشن لڑیں۔ ایک فاضل جج کی جانب سے یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ آپ تشریف لائیں آپکو گرفتار نہیں کیا جائے گا۔ ایک طرف وہ پرائم منسٹر جو کروڑوں ووٹ لے کر آیا اس کو اس لیے نکالا کہ اس کا فیصلہ پہلے ہوچکا تھا۔یاد رہے کہ شیخ رشید کی اہلیت پر سوال کا جواب دیتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ فیصلے کا علم ہونے کے باعث شیخ رشید کا فیصلہ سننا بھی گوارا نہیں کیا۔ 70 سال سے عوامی نمائندوں کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کرنے کی روایت نواز شریف نے توڑی۔ نواز شریف ڈٹ گیا اور پلاننگ ناکام بنائی۔ اب ان لوگوں کو سمجھ نہیں آرہی کہ وہ کہاں جائیں، دائیں جائیں، بائیں جائیں پیچھے رہیں یا سامنے آئیں۔ یہ سارا کچھ ایک سکرپٹ کا حصہ تھا اور اب نواز شریف ڈٹ گیا ہے اور یہ سکرپٹ ناکام ہوگیا۔