18 سال سے کم عمر بچوں کیلیے سگریٹ نوشی کی ممانعت،بل منظور

اسلام آباد(بولونیوز)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ہیلتھ سروسز و ریگولیشنز نے 18سال سے کمر عمر بچوں کو سگریٹ نوشی سے ممانعت کے حوالے سے ترمیمی بل 2018 منظور کرتے ہوئے سینما گھروں میں سگریٹ نوشی کی ممانعت کے حوالے سے ترمیمی بل 2018 مزید غور کیلیے وزارت قانون و انصاف کو بھجوا دیے قائمہ کمیٹی نے ملک بھر میں ادویہ کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے حوالے سے وزارت ہیلتھ سروسز کے ڈائریکٹر پرائسنگ کو طلب کرلیا۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق منگل کو اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر میاں عتیق شیخ کی زیر صدارت ہوا، وزارت ہیلتھ سروسز کی جانب سے کمیٹی کو 18 سال سے کم عمر بچوں کو سگریٹ نوشی سے ممانعت کے حوالے سے ترمیمی بل 2018 اور سینما گھروں میں سگریٹ نوشی کے حوالے سے ترمیمی بل کے حوالے سے بریفنگ دی گئی، کمیٹی نے متفقہ طور پر کم عمر بچوں کو سگریٹ نوشی کے حوالے سے ترمیمی بل 2018 منظور کر لیا جبکہ سینما گھروں میں سگریٹ نوشی کی ممانعت کے حوالے سے ترمیمی بل 2018 مزید غور کیلیے وزارت قانون و انصاف کو بھجوا دیے، سیکریٹری وزارت ہیلتھ سروسز کی جانب سے کمیٹی کو وزارت کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ وزارت ہیلتھ کے تحت کام کرنیوالے ادارے پاکستان میڈیکل کونسل کی سربراہی سپریم کورٹ کے حکم پر عدالت عظمیٰ کے ایک جج کو دے دی گئی، میڈیکل کالجز میں داخلے کیلیے انٹری ٹیسٹ کے معاملے کی نگرانی بھی وزارت کر رہی ہے، نیشنل کونسل بل میں ترمیم بھی زیر غور ہے۔