عدلیہ مخالف نعرے بازی،6 ملزموں کے نام ای سی ایل میں

لاہور(بولونیوز) لاہورہائیکورٹ نے قصورریلی میں عدلیہ مخالف نعرے بازی کے مقدمہ میں نامزد ایم این اے، ایم پی اے سمیت تمام ملزمان کے نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق لاہورہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہرعلی اکبرنقوی کی سربراہی میں تین رکنی فل بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ عدالتی حکم پر نامزد ملزمان ایم این اے وسیم اختر، ایم پی اے نعیم صفدر، چیئرمین بلدیہ قصورایاز خان، وائس چیرمین احمد لطیف کو عدالت میں پیش کیا گیا۔ ڈی پی او قصور نے عدالت کو بتایا کہ دو ملزمان جمیل خان اورناصراحمد خان مفرور ہیں۔یاد رہے کہ عدالت نے استفسار کیا کہ مفرورملزمان کوکیوں گرفتارنہیں کیا گیا، ڈی پی او قصور نے بتایا کہ مقدمے میں متعدد ملزمان کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔عدالت نے عدلیہ مخالف تقاریرکے مقدمہ میں نامزد ایم این اے ، ایم پی اے سمیت تمام ملزمان کے نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم دے دیا۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عدالت نے ڈی پی او قصور کو ہدایت کی ہے کہ اگر معاملہ سائبر کرائم کے زمرے میں آتا ہے تو ایف آئی اے کے سپرد کر دیا جائے۔عدالت نے مفرور ہونے والے دونوں ملزمان جمیل خان اور ناصر احمد خان کو آئندہ سماعت پر پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 7 مئی تک ملتوی کر دی۔