ایس ایس پی تشدد کیس،اے ٹی سی نے عمران خان کوبری کردیا

اسلام آباد(بولونیوز) انسداد دہشتگردی کی عدالت نے ایس ایس پی تشدد کیس میں عمران خان کو بری کر دیا۔ اے ٹی سی نے 13 اپریل کو محفوظ کیا گیا فیصلہ چیئرمین پی ٹی آئی کی موجودگی میں سنایا۔تفصیلات کے مطابق انسداد دہشتگردی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے ایس ایس پی تشدد کیس میں عمران خان کی بریت کی درخواست منظور کر لی۔ عدالت نے ناکافی شواہد کی بنیاد پر عمران خان کو بری کیا، ایس ایس پی عصمت اللہ نے بھی عمران خان پر تشدد کا الزام نہیں لگایا تھا۔چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا میاں صاحب کا ذہنی توازن خراب ہو گیا ہے، نواز شریف کسی ڈاکٹر سے اپنا معائنہ کرائیں ، وہ کہتے ہیں عمران کو ووٹ دینا اداروں کو ووٹ دینا ہے، نواز شریف ٹھیک کہہ رہے ہیں، شکریہ نواز شریف۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عمران خان کا کہنا تھا شہباز شریف نے پنجاب میں جبکہ آصف علی زرداری نے سندھ میں ماورائے عدالت قتل کرائے۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا ن لیگ نے کبھی خواتین کو عزت نہیں دی، یہ ذاتیات پر اتر آتے ہیں، انہوں نے نصرت بھٹو ، بے نظیر بھٹو پر الزام لگائے، میری ذات سے متعلق باتیں کیں۔ان کا کہنا تھا ن لیگی خواتین کے متعلق توہین آمیز باتیں کرتے ہیں لیکن مریم نواز ان کو کیوں کچھ نہیں کہتیں۔یاد رہے کہ 2014 میں حکومت کے خلاف اسلام آباد کے ڈی چوک پر دھرنے کے دوران عمران خان، سربراہ عوامی تحریک طاہر القادری اور دیگر کے خلاف چار مقدمات درج کیے گئے تھے۔جن میں پی ٹی وی حملہ، پارلیمنٹ حملہ اور ایس ایس پی عصمت جونیجو تشدد کیس شامل تھے۔