پسند کی شادی گناہ ثابت،ننھی معصوم بچی غیرت کے نام پرقتل

گلگت(بولونیوز) پسند کی شادی کرنا گناہ ثابت ہوگئی چلاس تھور سے تعلق رکھنے والے ننی معصوم بچی حاملہ ماں سمیت جوڑے کوبشام میں غیرت کے نام پرقتلِ کردیا گیا ہوا کی بیٹی پرظلم قانون،انسانی حقوق کی تنظیمیں، میڈیاں اور جی بی کے عوام خاموش تماشائی فضل ربی کو انصاف دلانے کیلئے سوشل ورکرعاصم خان، ہیومن رائٹز اوبزرور گلگت بلتستان کے کوآرڈینیٹر فاروق احمد اور سینکڑوں شوشل ورکروں کا گلگت پریس کلب میں چند روز پہلے خیبر پختونخوا بشام الائی کے مقام پر تھور چلاس سے تعلق رکھنے والے فضل ربی، ڈیٹ سالہ بچی اور حاملہ خاتون کے بے رحمانہ قتلِ کے خلاف پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کئی دن گزرنے کے بعد بھی ملزموں کو گرفتار نہ کرنا کے پی کے پولیس کے منہ پر تماچہ ہے اور کے پی کے پولیس میں بہتری کے دعوے بھی جھوٹے ثابت ہوے ہے آج اگر ہم خاموش تماشائی کا کردار ادا کرتے رہینگے تو آئے روز ہوا کی بیٹیوں کے ساتھ ظلم وبربریت ہوگی فضل ربی اور اس کے اہلخانہ پر ہونے والی ظلم وبربریت پر صوبائی حکومت گلگت بلتستان اور خیبرپختونخوا ہ حکومت نوٹس لے اور ملزمان کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے انہوں نے مزید کہا کہ مقتولین کو انصاف دلانے کیلئے اسلام آباد پریس کلب کے سامنے بہت جلد احتجاج کیا جائے گا اور انصاف ملنے تک پورے پاکستان میں احتجاجی مظاہرے کئے جاینگے انہو نے وزیراعظم پاکستان آرمی چیف پاکستان اور چیف جسٹس آف پاکستان سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقتولین کو انصاف دلانے کیلئے کردار ادا کر ے-