زرداری نے اقتدارکیلئے مرتضیٰ اوربینظیرکومروایا، مشرف

کراچی(بولونیوز) سابق صدر پرویز مشرف نے ایک مرتبہ پھر الزام عائد کیا ہے کہ آصف زرداری مجرمانہ ذہنیت کا ایک ایسا سیاستدان ہے جس نے اقتدار کے حصول کے لئے پہلے اپنے سالے مرتضیٰ بھٹو اور بعد میں اپنی بیوی بے نظیر بھٹو کومروایا۔تفصیلات کے مطابق سوالوں کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 90 کی دہائی میں بے نظیر کے دو ادوار میں آصف زرداری نے اتنے بڑے پیمانے پر کرپشن کی تھی کہ انہیں مسٹر ٹین پرسنٹ کہا جانے لگا تھا ۔انہوں نے کہا کہ زندگی میں دو مرتبہ آصف زرداری سے ملا لیکن کسی بھی طرح کے معاملات طے نہیں ہوئے تھے۔یاد رہے کہ صدارت سے استعفیٰ دینے کے سوال پر جواب دیتے ہوئے پرویز مشرف نے کہا کہ مواخذے کے سلسلے میں مجھ پر بڑا دباؤ تھا ، اگرچہ حفیظ پیرزادہ اس بات کا یقین دلاچکے تھے کہ میرے خلاف مواخذے کی تحریک ناکام ہوجائے گی لیکن میں نے ایک بے اختیار صدر رہنے کے بجائے مستعفی ہونا مناسب سمجھا۔ کارگل ایڈونچر کے بارے میں انہوں نے کہا کہ بھارت نے اس سلسلے میں امریکی صدر بل کلنٹن سے نواز شریف پر دباؤ ڈلوایا تھا اور میاں صاحب اپنے دورہ امریکا کے دوران امریکی صدر بل کلنٹن کویقین دہانی کروا کر آئے تھے کہ پاکستانی افواج پہلی فرصت میں کارگل سے دستبردار ہو جائے گی۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پرو یز مشرف نے مزید بتایا کہ میں نے راجہ ظفر الحق اور چوہدری شجاعت کی موجودگی میں کارگل میں پاکستانی پوزیشن کے بارے میں بریفنگ دی تھی لیکن نوا ز شریف اپنے آقاؤں کو خوش کرنے کے لئے کارگل سے دستبردار ہوگئے اور سار الزام مجھ پر دھردیا ۔ وہ مجھے سپیس گوٹ یا قربانی کا بکرا بنانا چاہتے تھے ، پرویز مشرف نے کہا کہ جب انسداد دہشت گردی کی عدالت نے نواز شریف کو سزائے موت سنائی تھی تو وہ سعودی شاہ سلطان سے رو رو کر فریاد کرتے تھے مجھے بچاؤ میری جان بخشی کراؤ،سعودی شاہ نے خود مجھ سے نواز شریف کو جلاوطن کرنے کی درخواست کی تھی ۔ چنانچہ پہلے مرحلے پر نواز شریف کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کیا گیا اور پھر عام معافی دے کر ایک تحریری معا ہدہ کے تحت 10 سال کے لئے سعودی عرب جلاوطن کردیا گیا۔