نقیب اللہ قتل کیس،ضمنی چالان عدالت میں پیش

کراچی(بولونیوز)نقیب اللہ قتل کیس کا ضمنی چالان انسداد دہشتگردی عدالت میں پیش،عدالت نے نقیب اللہ قتل۔کیس کا ضمنی چالان منظور کرلیا-تفصیلات کے مطابق جیو فینسنگ رپورٹ کے مطابق ملزم راو انوار جائے وقعہ پر موجود تھا, ضمنی چالان کے مطابق ملزم راو انوار 2.43مینٹ پر جائے وقعہ پر پہنچا-یاد رہے کہ جیو فینسنگ رپورٹ کے مطابق واقعے کے بعد اور واقعے کہ وقت تمام ملزمان ایک دوسرے سے رابطے میں تھے-بادی النظر میں پولیس مقابلہ منصوبہ کے تحت کیا گیا-واضح رہے کہ دوران تفتیش ملزم راوانوار اپنے ملوث نہ ہونے کے بارے میں کوئے ثبوت پیش نہیں کر سکا-ملزم راو انوار دوران تفتیش ٹال مٹول سے کام لیتا رہا-ملزم راو انوار مسلسل حقائق بتانے سے بھی گریز کرتا رہا-راو انوار کا جائے موقع پر موجود ہونا صابط ہوتا ہے-ذرائع کے مطابق مقتولین کو دہشتگرد قرار دیتے ہوئے جھوٹے پولیس مقابلے میں حلق کرنا صابط ہوتا ہے-ڈی این اے رپورٹ کے مطابق ملزمان کو 1 فٹ سے 5 فٹ کے فاصلے سے گولیاں ماری گئیں-اب تک کی تفتیش کے مطابق ملزم راو انوار جھوٹے پولیس مقابلے کا مرکزی کردار ہے-سابق ایس ایس ملزم راو انوار ڈی ایس پی قمر احمد سمیت 12 ملزمان گرفتار ہے-اے ایس آئی گدا حسین سب انسپکٙٹر شعیب محمد شعیب عرف شعیب شوٹر سمیت 13 سے زائد ملزمان تاحال مفرور ہے-