سندھ بارکونسل،سندھ بھرکی عدالتوں میں ہڑتال کا اعلان

کراچی(بولونیوز) سندھ بار کونسل نے عدلیہ میں کرپشن،ججوں کے خلاف شکایات پر فیصلے نہ ہونااور وکلا کے خلاف بے جا کارروائی کے خلاف 5 مئی کو سندھ بھر کی عدالتوں میں مکمل ہڑتال کا اعلان کردیاہے،سندھ کے وڈیروں نے نجی جیلیں بنا رکھی ہیں انہیں ختم کیا جائے۔تفصیلات کے مطابق پیرکو سندھ بار کونسل کے وائس چیئرمین صلاح الدین گنڈا پور نے اپنے ممبران محمودالحسن ایڈووکیٹ اور نورناز آغا ایڈووکیٹ سمیت دیگر کے ہمراہ کمیٹی روم میں پریس کانفرنس کی۔ وائس چیئرمین صلاح الدین گنڈا پور نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتےہوئے کہاکہ ماتحت عدلیہ میں کرپشن اور نااہلیت عروج پر ہے۔عدلیہ کرپشن اور نااہلیت پر کوئی کارروائی نہیں کررہی۔ وکلا کو توہین عدالت کی کارروائی میں پھنسایا جا رہا ہے،اگر جسٹس منیب اختر کی سپریم کورٹ میں تعیناتی عمل میں لائی گئی تو الجہاد ٹرسٹ کیس فیصلے کی خلاف ورزی ہوگی کیونکہ جسٹس منیب اختر ہائی کورٹ کے چوتھے نمبر پر جج ہیں، عدلیہ کے انتظامی فیصلے سے عدالتی فیصلہ زیادہ اہم ہے۔انہوں نے سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ کیا جسٹس منیب اختر کے اوپر کے ججز اہل نہیں؟۔ انہوں نے کہا کہ اگر جسٹس منیب اختر کے اوپر کے ججز سپریم کورٹ جانے کے اہل نہیں تو انہیں فارغ کیا جائے،سندھ میں وکلا کو اغوا کیا جا رہا ہے۔ وکلا پر تشدد کے واقعات سامنے آچکے ہیں۔ لاڑکانہ، سکھر اور پورے سندھ میں وکلا ریاستی تشدد کا شکار ہیں۔ پولیس وکلا کو مکمل تحفظ فراہم کرے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں لاپتہ شہریوں کو عدالتوں میں پیش کیا جائے،اندرون سندھ میں وڈیروں کی جیلیں ختم کی جائیں۔ سنا ہے بعض پولیس افسران نے بھی نجی جیلیں قائم کر رکھی ہیں۔ ججوں کی سلیکشن میں بار کی مشاورت یقینی بنائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ افغانیوں اور برمیوں کو شناختی کارڈز جاری کرنے کی مذمت کرتے ہیں۔ سینئر وکلا رہنما محمود الحسن نے کہا کہ عدلیہ دوسرے اداروں میں سینیارٹی کی بات کرتی ہے مگر عدلیہ پر بھی اطلاق ہونا چاہیے۔ ماتحت عدالتوں کا حال بہت برا ہے۔ ماتحت عدلیہ میں سفارش کی بنیاد پر بھرتیاں کی جا رہی ہیں۔ سینئر وکیل نور ناز آغا نے کہا کہ ججوں کی تعیناتی میں شفافیت ضروری ہے۔ جج کے لیے کچھ معیارات ضرور ہونے چاہیں،وائس چیئرمین صلاح الدین گنڈا پور نے اعلان کرتےہوئے کہاکہ ہم نےعدلیہ میں کرپشن ،ججوں کے خلاف شکایات پر کارروائی نہ کرنااور وکلا کو غیر ضروری توہین عدالت کے نوٹس جاری کرنے کےخلاف مشاورت سے فیصلہ کیاہےکہ 5 مئی کو مکمل طورپر سندھ بھر کی عدالتوں میں ہڑتال کی جائے گی۔