نقیب قتل کیس،راؤانوارسینٹرل جیل کی بجائے گھرمیں قید

کراچی(بولونیوز) نقیب اللہ قتل کیس میں نامزد ملزم معطل ایس ایس پی راؤ انوار کے گھر کو ہی سب جیل قرار دے دیا گیا جب کہ راؤانوارکو آج عدالت میں پیش نہیں کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق پولیس نے 21 اپریل کو راؤ انوار کا 30 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر انہیں انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا تھا جہاں عدالت نے انہیں 2 مئی تک جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق معطل پولیس افسر راؤ انوار کو آج عدالت میں پیش ہونا تھا تاہم وہ طبعیت کی خرابی کے باعث پیش نہیں ہوئے۔ذرائع کےمطابق جیل حکام کی جانب سے راؤ انوار کی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کی گئی جس میں بتایا گیا کہ راؤ انوار کو کئی بیماریاں لاحق ہیں، ان کا شوگر لیول اور بلڈ پریشر بڑھا ہوا ہے جس کے باعث ان کی طبعیت ناساز ہیں اور وہ عدالت میں پیش نہیں ہوسکتے۔یاد رہے کہ جیل حکام کی جانب سےمیڈیکل رپورٹ پیش کیے جانے پر مدعی مقدمہ کے وکیل نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سماعت پر راؤ انوار کو بغیر ہتھکڑی کے پروٹوکول کے ساتھ پیش کیا گیا اور وہ ہشاش بشاش تھے۔مدعی مقدمہ کے اعتراض پر عدالت نے جیل حکام کو حکم دیاکہ راؤ انوار کو آئندہ سماعت پر پیش کیا جائے، اگر وہ پیش نہ ہوئے تو جس ڈاکٹر نے ان کا میڈیکل سرٹیفکیٹ بنایا اسے بھی طلب کیا جاسکتا ہے۔