خواجہ آصف،اقامے پرنااہلی کا فیصلہ،سپریم کورٹ میں چیلنج

اسلام آباد(بولونیوز) خواجہ آصف نے اپنی نااہلی کا ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا۔ خواجہ آصف نے عدالت سے استدعا کی ہائیکورٹ کا فیصلہ اور الیکشن کمیشن کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیا جائے۔تفصیلات کے مطابق خواجہ آصف نے سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں موقف اپنایا ہے وہ کاغذات نامزدگی میں بیرون ملک کا بینک اکاؤنٹ غیراداری طور پر ظاہر نہیں کر سکے، بینک اکاؤنٹ میں کاغذات نامزدگی کے ڈیکلیئرڈ اثاثوں کی 0.5 فیصد رقم تھی، درخواست گزار نے ہائیکورٹ سے حقائق چھپائے، کاغذات نامزدگی میں 6.8 ملین روپے کی بیرونی آمدن کو ظاہر کیا، بیرون ملک کی ظاہر کردہ آمدن میں تنخواہ بھی شامل تھی۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ موجودہ رٹ دائرہونے سے قبل بینک اکاؤنٹ اوراقامہ ظاہرکرچکا تھا، ہائیکورٹ نے بغیرشواہد غیرفعال بینک اکاؤنٹ کو ظاہرنہ کرنا بدنیتی قرار دے دیا، اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے میں ملکی اور یو اے ای قوانین کو مدنظرنہیں رکھا گیا۔یاد رہے کہ درخواست میں کہا گیا ہے کہ ہائیکورٹ نے قیاس آرائیوں پر مبنی فیصلہ دیدیا، رٹ 2017 میں دائر ہوئی، 2015 میں اقامہ ظاہر کیا، خود سے اکاؤنٹ ظاہر کرنے کے عمل کو بدنیتی نہیں کہا جا سکتا۔