احسن اقبال کیخلاف توہین عدالت درخواستیں،7مئی کو طلب

اسلام آباد(بولونیوز) سپریم کورٹ میں وفاقی وزیرداخلہ احسن اقبال کے خلاف توہین عدالت دائرکی گئی دوسری جانب لاہور ہائیکورٹ میں دائر توہین عدالت درخواست پر وزیرداخلہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 7 مئی کو طلب کرلیا گیا۔تفصیلات کے مطابق محمود اخترنقوی کی جانب سے سپریم کورٹ میں دائرکی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ احسن اقبال نے اپنے بیان میں چیف جسٹس کی توہین کی، احسن اقبال کوآئین کے آرٹیکل 63-64 کے تحت نااہل قرار دیا جائے، احسن اقبال سے 2008-2018 تک وصول کی گی تمام مراعات اور تنخواہ واپس لی جائے۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق لاہورہائیکورٹ کے جسٹس مظاہرعلی اکبرنقوی پرمشتمل فل بنچ نے اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی متفرق درخواست پر سماعت کی۔ درخواست میں احسن اقبال اورپیمرا سمیت دیگرکو فریق بنایا گیا تھا۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کہ وزیر داخلہ احسن اقبال نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عدلیہ کو تنقید کا نشان بنایا، پیمرا کو عدالت نے پابند کر رکھا ہے کہ عدلیہ مخالف تقاریر نشر نہ کی جائے اس کے باجود احسن قبال کی عدلیہ مخالف تقاریر میڈیا پر نشر کی گئی۔یاد رہے کہ درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت احسن اقبال کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے جبکہ پیمرا کو عدلیہ مخالف تقاریر نشر کرنے سے روکنے کے احکامات جاری کیے جائیں۔ عدالت نے احسن اقبال کو ذاتی حثیت میں پیش ہونے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی سماعت 7 مئی تک ملتوی کر دی۔