کیا بنی گالا قانون سے بالاترہے،غیرقانونی تعمیرات ہوئیں

اسلام آباد(بولونیوز) سپریم کورٹ نے بنی گالہ میں غیرقانونی تعمیرات سے متعلق ازخود نوٹس کیس میں تمام فریقین کو مسائل کی نشاندہی اور حل کیلئے 2 ہفتوں میں تجاویزطلب کرلی ہیں۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ غیرقانونی تعمیرات کے حوالے سے کوئی فیصلہ کرنا پڑے گا،ایک مسئلہ غیرقانونی الاٹمنٹ کا بھی ہے، کیا بنی گالا قانون سے بالاترہے، جوغیرقانونی تعمیرات ہوئیں،عمران خان کے پاس گھرکا نقشہ ہے تو پاس کروا لیں، لیڈرکوہرمعاملے میں فرنٹ سے لیڈ کرنا چاہیے۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بابراعوان بولے کہ عمران خان کا گھرغیرقانونی تعمیرات میں شامل نہیں، چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت نے عمران خان کا گھر غیرقانونی ہونے کا نہیں کہا،مسئلے کے حل کیلئے تجاویزدیں، بہت لوگوں نے درخواست دی کہ عمران خان کا گھرغیرقانونی ہے، اگرعمران خان کی تعمیرات قانون کے مطابق ہیں تو ٹھیک ہے، عدالت نے تعمیرات کو تباہ نہیں کرنا، تمام فریقین مسائل کی نشاندہی اور حل کیلئے تجاویز دیں۔ عدالت نے سماعت 2 ہفتے کیلئے ملتوی کردی گئی۔