جرمنی کے معروف سیاستدان کی بیٹی کو زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا

برلن(بولو نیوز) جرمنی میں ایک معروف سیاستدان کی بیٹی ماریا لیڈن برگر کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کی لرزہ خیز واردارت ہوئی ہے۔ مقتولہ جرمنی کے شہر فرائیبرگ کی ایک جامعہ میں زیر تعلیم تھی۔ایک نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ماریا لیڈن برگر ایک پارٹی میں شرکت کے بعد گھر واپس جا رہی تھی کہ یہ اندوہناک واقعہ پیش آ گیا۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ماریا کو قتل کرنے سے پہلے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ مقتولہ کی لاش دریا سے ملی۔ خبریں ہیں کہ قتل کا یہ واقعہ 16 اکتوبر کو پیش آیا تاہم اس کی تفصیلات کو مجرم کی گرفتاری کے بعد جاری کیا گیا ہے، جو ایک افغان مہاجر ہے۔ ملزم کی شناخت کیلئے ڈی این اے سے مدد لی گئی جو مقتولہ ماریا کے سکارف سے لیا گیا تھا۔ ابتدائی تفتیش کے مطابق 17 سالہ افغان نوجوان نے 20 سالہ ماریا لیڈن برگر کی پہلے عصمت دری کی اور پھر گلا گھونٹ کر لاش کو دریا میں پھینک دیا۔ ماریا کی تلاش کے دوران دریا کے پاس ایک درخت کے نیچے بالوں کا ایک گچھا اور اس کا مخصوص سکارف مل گیا تھا۔ کم عمر افغان نے گزشتہ جمعہ کے روز کو ماریا پر قابو پانے کا اعتراف کیا تھا۔ یہ افغان مہاجر گزشتہ سال ہی جرمنی پہنچا تھا اور ایک مقامی افراد کے پاس رہائش پذیر تھا۔